0

واٹس ایپ می پلیٹجنگ فارم میں بہت بڑے فیچرز کے فارم کا اعلان کرتا ہے۔

یہ فیچر بہت جلد تمام صارفین کو دستیاب ہے / فائل کی تصاویر
یہ فیچر بہت جلد تمام صارفین کو دستیاب ہے / فائل کی تصاویر

واٹس ایپ نے اپریل میں ایک اکاؤنٹ یا فون نمبر بیک وقت کئی ویب سائٹس کو استعمال کرنے کا فیچر متعدی کرایا۔

اسی طرح گزشتہ روز چیٹ لاک کا بہترین فیچر میسجنگ ایپ کا حصہ بنایا۔

اب میٹا کی زیرملکیت میسجنگ ایپ کی طرف سے ایک اور بڑے فیچر کی جانب سے اعلان کیا گیا۔

واٹس ایپ کی ایک ٹوئٹ میں تصدیق کی گئی ہے کہ میس ایڈٹ کرنے والا نیا نیا فیچر بہت جلد تمام صارفین کو دستیاب ہے۔

کمپنی کی جانب سے اپنا نام نہیں بتایا گیا لیکن ایک ویڈیو میں کہا گیا ہے کہ صارفین بہت جلد اپنے میسجز کو ایڈیٹر کر رہے ہیں

اس سے ہٹ کر مزید تفصیلات سامنے نہیں آئیں۔

لیکن یہ فیچر مئی 2023 کے آغاز اینڈرائیڈ، آئی اور ایس اور ویب کے پتوں (بیٹا) ورژنز میں متغیر کرا دیا گیا۔

لیکن نئی اپ ڈیٹ عندیہ ماڈل ہے کہ ایڈیٹ بٹن کا فی جلد تمام افراد کو دستیاب ہے۔

اس فیچر کے ذریعے صارفین میسج بھیجنے کے 15 منٹ کے بعد اسے ایڈٹ کر سکتے ہیں

خیال رہے کہ ایپ کا استعمال کرنے والا ہر فرد کو اس میں کئی پیغامات بھیجاتا ہے، لیکن کئی بار جلد میسج بھیجنے کے بعد غلطی کا احساس ہوتا ہے۔

ایسا ہونے پر میسج کو ڈیلیٹ کرنا پڑتا ہے کوئی اور آپ کو دستیاب نہیں ہوتا، لیکن یہ نیا فیچر اس آواز کا حل ہے۔

جب کوئی میسج ایڈٹ کیا جائے گا تو ایک لیبل کے ذریعے اس میں تبدیلی کو واضح کیا جائے گا۔

صارفین کی خصوصیات کو کس طرح استعمال کریں؟

اگر آپ کے واٹس ایپ کے نئے اکاؤنٹ ورژن استعمال کر رہے ہیں، خاص طور پر اینڈرائیڈ اور آئی اور ایس ڈیویژنز پر، تو اس کی خصوصیات کو استعمال کرنا بہت آسان ہے۔

اگر آپ آئی اور ایس ڈیوائس پر ایپ کا استعمال کر رہے ہیں تو اسے پیغام بھیجنے کے بعد اسے سلیکٹ کریں، ایسا کرنے پر آپ کے سامنے پوپ اپ مینیو میں ایڈیٹر کا آپشن نظر آئے۔

اسی طرح اینڈرائیڈ ڈیوائسز پر میسج کو سلیکٹ کرنے کے بعد اوپر دائیں جانب سے ڈاکٹر مینیو پر کلک کریں تو وہاں ایڈٹ کا آپشن نظر آئے گا۔

ایڈٹ آپشن پر کلک کریں آپ اپنے پیغام کو تبدیل کر سکتے ہیں یا کوئی غلطی ہے تو اسے درست کر سکتے ہیں۔

دوسری اوپر درج کیا جانچ پڑتال ہے کہ فی الحال یہ فیچر صارفین کو دستیاب ہے اور اسے صرف ٹیکسٹ میسجز پر ہی استعمال کیا جا سکتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply