0

نیب نے وزیراعظم شہباز شریف کو آشیانہ ہاؤسنگ اسکینڈل میں بےگناہ قرار دیدیا

فوٹو: فائل
فوٹو: فائل

لاہور: قومی احتساب بیورو (نیب) نے شہباز شریف کو آشی ہاؤسنگ اسکیم اسکینڈ میں بےگناہ قرار دے دیا۔

پاکستان کی رپورٹ کے مطابق آشیانہ ہاؤسنگ اسکیم کے ٹھیکے میں بدعنوانی کو کوئی ثبوت نہیں ملے، سرکاری خزانے کو نقصان پہنچانے والے شہباز شریف نے کوئی فائدہ حاصل نہیں کیا۔

پاکستان کے مطابق شہباز شریف کے خلاف طاقت کے استعمال کے کوئی ثبوت نہیں ملے، اس میں شہباز شریف کے خلاف بدنیتی کا کوئی پہلو بھی ثابت نہیں ہوتا۔

پاکستان کا کہنا ہے کہ بغیرکسی شکوک کے بارے میں یہ بات ثابت ہو رہی ہے کہ سرکاری خزانے کو نقصان نہیں پہنچا۔

ماضی کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ کامران کیانی نے بھی سرکار کے خزانے کو نقصان نہیں پہنچایا اور نہ ہی حسن فواد نے ٹھیکہ دلوانے کے لیے قرض لے لیا۔

پنجاب کے مطابق شہباز شریف نے آشیانہ ہاؤسنگ اسکیم کامعاملہ قانون کے مطابق کوبھجوایا۔

آپ نے قبول کیا ہے کہ احتساب عدالت قانون کے مطابق شہبازشریف کی بریت کی درخواست پر فیصلہ کیا گیا ہے۔

شہباز شریف پر کیا کاغذات تھے؟

پاکستان کی طرف سے شہبازشریف پر چار ضرب ضمانت پر چلے گئے۔

انہوں نے کہا کہ آپ نے کہا ہے کہ آپ نے کہا ہے کہ آپ نے کہا ہے کہ آپ کو اس کی منصوبہ بندی کی ضرورت ہے۔

دوسرا الزام تھا کہ ایل ڈی اے سے دوبارہ پی ایل سی کو منتقل کرنے کے لیے غیر قانونی حکم دیتا ہے۔

تیسرا الزام عائد کیا گیا تھا کہ اس نے اس پروڈکشن کو پراگون کو منتقل کرنے کا حکم دیا، پھر غیر قانونی قانون کے پی پی پی (پبلک پرائیوٹ پارٹنرشپ) موڈ میں رکھنا۔

شہباز شریف پر چوتھا الزام عائد کیا گیا تھا کہ وہ غیر قانونی طور پر معاملات کے معاملات میں مخل ہوتے ہوئے کوائے طاق بورڈ کے اقدام کو بالائے طاق رکھتے ہوئے 203 میں لطیف سنز کے ساتھ معاہدے کو غیر قانونی طور پر منسوخ کر دیتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply