0

الشفااسپتال میں نسل کشی کا ذمہ دار امریکا ہے، حماس

حماس کا کہنا ہے کہ غزہ کے الشفا اسپتال میں نسل کشی کا ذمہ دار بائیڈن ہیں۔

حماس کی جانب سے جاری بیان کے مطابق وہ امریکی صدر جو بائیڈن اور ان کی انتظامیہ کو غزہ کے الشفاء اسپتال میں اسرائیلی افواج کی جانب سے کی جانے والی “نسل کشی ” کے لیے براہ راست ذمہ دار ٹھہراتی ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ اسپتال میں جو کچھ ہو رہا ہے اور اسرائیل تیسرے دن بھی اپنا حملہ جاری رکھے ہوئے ہے ایک “منظم قتل عام” ہے جو دنیا دیکھ رہی ہے۔

اس ہفتے کے شروع میں حماس نے بھی ایسا ہی ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ وائٹ ہاؤس نے اسرائیل کو “شہریوں کے خلاف مزید قتل عام” کرنے کے لیے گرین سگنل دیا ہے۔

اسرائیل نے غزہ کے شفاخانوں کو مردہ خانے بنا دیا۔ چوبیس گھنٹے میں مزید بائیس مریض دم توڑ گئے۔ الشفا اسپتال تیسرے روز بھی اسرائیلی فوج کے قبضےمیں ہے۔ تفتیش کےنام پر مریضوں اور ڈاکٹروں کومارا پیٹاجارہا ہے۔

پناہ گزینوں اور مریضوں کو باہر نکلنےکی اجازت بھی نہیں۔ ڈائریکٹر الشفا اسپتال کا کہنا ہے کہ آئی سی یو میں موجود تمام مریض دم توڑ گئے ہیں۔

قابض فوج نے الشفا اسپتال کے مختلف حصوں کو مکمل تباہ کردیا ہے، اسرائیلی فوجی شہید فلسطینیوں کی لاشیں بھی اٹھا کر اپنے ساتھ لے گئے ہیں جبکہ افواج کی جانب سے اسپتال کے احاطے میں گاڑیوں کو بھی تباہ کردیا گیا ہے۔

غزہ کےانڈونیشین اسپتال میں بھی کام بند ہو چکا ہے۔ ایندھن دوائیاں اور آکسیجن نہ ملنے سے سیکڑوں زندگیاں داؤ پر لگی ہیں۔

Comments

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply