0

گوادر میں ماہی گیری کو جدید بنانے کے لیے کوشاں ہیں، وزیر اعظم کاکڑ

اسلام آباد : نگران وزیر اعظم انوارالحق کاکڑ  نے کہا ہے کہ گوادر میں ماہی گیری کو جدید طرز پر لانا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

یہ بات انہوں نے گوادر شپنگ اینڈ کلیئرنگ ایجنٹس ایسوسی ایشن کے وفد سے ملاقات میں کہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت گوادر میں ماہی گیری کی برآمدی صلاحیت سے بھرپور فائدہ اٹھائے گی۔

ایسوسی ایشن کے صدر عبدالرحیم ظفر، سیکرٹری جنرل حمید بلوچ اور فیصل دشتی سمیت وفد نے وزیراعظم سے درخواست کی کہ گوادر پورٹ کو مکمل طور پر آپریشنل کرنے سے پہلے حکومت کے کارگوز کے ایک مخصوص حصے کی درآمد کی اجازت دی جائے۔

وزیراعظم نے متعلقہ حکام کو اس حوالے سے جامع رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی، گوادر کو مستقبل میں سمندری تجارت کا مرکز قرار دیتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ حکومت صنعتی علاقوں کو جوڑنے کے لیے مواصلاتی انفرااسٹرکچر کی تعمیر کے علاوہ بندرگاہ پر صنعتوں کے قیام کے لیے اقدامات کر رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ گوادر کے لوگوں کو روزگار کے مواقع اور بین الاقوامی معیار کی سہولیات کی فراہمی بندرگاہ کی ترقی کے لیے ناگزیر ہے، وفد کے ارکان نے وزیراعظم کو شپنگ کلیئرنگ ایجنٹس اور فشریز کو درپیش چیلنجز سے آگاہ کیا۔

نگران وزیر اعظم انوارالحق کاکڑ نے انہیں یقین دلایا کہ ان کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کئے جائیں گے۔ وفد نے گوادر شہر کے مجموعی مسائل کے حل کے علاوہ ماہی گیروں کو روزگار اور پیشہ ورانہ تربیت کی فراہمی کے لیے حکومت کے اقدامات کو بھی سراہا۔

Comments

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply