0

اسرائیلی فوج نے حماس کے سربراہ اسماعیل ہنیہ کے آبائی گھر پر بھی بم برسادیے

غزہ : اسرائیلی فوج نے حماس کے سربراہ اسماعیل ہنیہ کے آبائی گھر پربھی بم برسادیے اور بمباری کی ویڈیوز بھی جاری کردیں۔

تفصیلات کے مطابق اسرائیلی فوج نے حماس کے سربراہ اسماعیل ہنیہ کے آبائی گھر پر بھی بمباری کردی، اسماعیل ہنیہ کے غزہ میں الشطی مہاجر کیمپ میں واقع خاندانی گھر کو نشانہ بنایا گیا۔

اسرائیلی ڈیفنس فورسز کی جانب سے جاری ویڈیوز میں لڑاکا طیاروں کی گھر پر بمباری دیکھی جاسکتی ہے، پورٹ میں بتایا گیا ہے کہ جس گھر پر اسرائیل کی جانب سے بمباری کی گئی ہے وہاں اسماعیل ہنیہ نے اپنا بچپن گزارا ہے۔

اسرائیلی فوج کا دعویٰ ہے کہ اسماعیل ہنیہ کے مبینہ گھر کو دہشت گردی کے لیے استعمال کیا جاتا تھا تاہم گھر پرحملے میں ہلاکتوں کے حوالے سے تصدیق نہیں ہوسکی۔

یاد رہے اس سے قبل اسرائیلی فوج کی غزہ پر بمباری سے حماس کے سربراہ اسماعیل ہنیہ کی پوتی روئی ہمام اسماعیل ہنیہ بھی شہید ہوگئیں تھیں، رؤی ہنیہ اسلامی یونیورسٹی آف غزہ میں میڈیکل کی طالبہ تھیں۔

واضح رہے غزہ میں صہیونی دہشت گردی نہ تھم سکی ، بیالیسویں روزبھی سفاکیت، درندگی، انسانیت سوز مظالم کا سلسلہ جاری ہے۔

سات اکتوبر سے اب تک شہید فلسطینیوں کی تعداد ساڑھے گیارہ ہزار سے زائد ہوچکی ہے ، فلسطینی وزارت صحت کے مطابق شہدا میں چار ہزار سات سو سات بچے، تین ہزار ایک سو پچپن خواتین اور سات سو کے قریب بزرگ شہری بھی شامل ہیں۔

وحشیانہ کارروائیوں میں تیس ہزارکےلگ بھگ فلسطینی زخمی ہوچکے ہیں جبکہ سترہ سو سے زائد بچوں سمیت تقریباً چار ہزار فلسطینی شہری لاپتا ہیں ، ریسکیو اداروں کے مطابق لاپتا افراد میں سے اکثریت عمارتوں کے ملبے تلے دبی ہے۔

Comments

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply