0

غزہ کی پٹی میں ٹیلی کمیونیکیشن سسٹم مکمل طور پر بند

غزہ کی پٹی میں ایندھن ختم ہونے کے باعث ٹیلی کمیونیکیشن سسٹم مکمل طور پر غیر فعال ہوگیا ہے، جس کے نتیجے میں ایمبولینس سروس بھی شدید متاثر ہورہی ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق غزہ میں امور انجام دینے والی دونوں ٹیلی کمیونیکیشن کمپنیوں کا کہنا ہے کہ تمام ٹیلی کام سروسز ایندھن نہ ہونے کے باعث بند ہوچکی ہیں۔

فلسطین میں کام کرنے والے اقوام متحدہ کے ادارے کا کہنا ہے کہ غزہ میں مکمل کمیونیکیشن بند ہوچکا ہے، مواصلاتی نظام کی بندش سے ایمبولینسوں سے رابطہ کرنا بھی ممکن نہیں رہا۔

یاد رہے کہ ٹیلی کام کمپنیوں کی جانب سے 15 نومبر کو آگاہ کردیا گیا تھا کہ ایندھن کی سپلائی نہ ہونے کے باعث مواصلاتی نظام مکمل طور پر بند ہوسکتا ہے، مواصلاتی نظام بند ہونے سے مظلوم فلسطینیوں کی مشکلات میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔

دوسری جانب اسرائیلی افواج کی جانب سے غزہ کے سب سے بڑے الشفا اسپتال پر لگاتار کارروائیوں کا سلسلہ جاری ہے، جس کے نتیجے میں ڈاکٹروں اور طبی عملے نے اسپتال میں زیر علاج مریضوں کی اموات میں اضافے کا خدشہ ظاہر کردیا ہے۔

الشفا اسپتال کے ڈائریکٹر محمد ابو سلامیہ کا عرب ٹی وی سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ہم مریضوں کی اموات کی شرح میں کمی کے منتظر ہیں تاہم ہر گزرتے لمحے کے ساتھ اسپتال میں داخل مریضوں کی اموات میں اضافے کا خطرہ بڑھتا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ 48 گھنٹوں سے الشفا اسپتال کا کنٹرول قابض افواج کے ہاتھوں میں ہے۔

فلسطینی اتھارٹی کی وزارت صحت کے مطابق اسرائیلی افواج الشفا اسپتال سے مریضوں یا طبی عملے کے محفوظ انخلا کی راستے بند کر رہی ہیں۔

قابض فوج نے الشفا اسپتال کے مختلف حصوں کو مکمل تباہ کردیا ہے، اسرائیلی فوجی شہید فلسطینیوں کی لاشیں بھی اٹھا کر اپنے ساتھ لے گئے ہیں جبکہ افواج کی جانب سے اسپتال کے احاطے میں گاڑیوں کو بھی تباہ کردیا گیا ہے۔

Comments

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply