0

بڑی تعداد میں غیر ملکی تارکین وطن ڈی پورٹ

کویت کی پبلک اتھارٹی برائے افرادی قوت کے ذرائع کا کہنا ہے کہ ملک میں غیر قانونی طور پر مقیم غیر ملکی تارکین وطن کی سب سے بڑی تعداد کو اس سال اگست، ستمبر اور اکتوبر میں بالترتیب 1,175 اور 996 اور 836 افراد حراست میں لئے گئے۔

غیر ملکی ذرائع ابلاغ کے مطابق چار رکنی مشترکہ کمیٹی کی سربراہی پبلک اتھارٹی برائے افرادی قوت کی جانب سے کی جارہی ہے، جبکہ اس میں وزارت داخلہ، وزارت تجارت و صنعت اور کویت میونسپلٹی کے ارکان شامل ہیں۔

اطلاعات کے مطابق رواں برس کے آغاز سے لے کر گزشتہ اکتوبر تک 5,504 افراد کو حراست میں لیا گیا، جن میں اقامہ اور لیبر قوانین کی خلاف ورزی کرنے والے ملازمین شامل تھے، ان گرفتار افراد کے خلاف قانونی اقدامات کیے گئے تاکہ انہیں ملک بدر کیا جاسکے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ حراست میں لئے گئے بعض افراد نے بتایا ہے کہ انہوں نے کاروباری مالکان کو ان کی کمپنی میں بھرتی کرنے کے عوض پیسے ادا کئے، جو 1,500 سے 2,000 دینار کے درمیان رقم بتائی جارہی ہے۔

پی اے ایم کے ذرائع کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ یہ خلاف ورزی کرنے والے ورکرز پرائیویٹ سیکٹر میں کام کرنے والے 2,115 تھے جن کے پاس آرٹیکل 18 کے ورک ویزے تھے جبکہ 1,429 گھریلو ملازم تھے جن کے پاس آرٹیکل 20 تھا، جو کہ کل خلاف ورزی کرنے والوں میں سے 26 فیصد کی نمائندگی کرتا ہے۔

اس کے علاوہ 28 جو فیملی ویزا پر سرکاری شعبے پر تھے۔ 1,910 ایسے جن کے ورک پرمٹ کی میعاد ختم ہو چکی تھی اور وہ ملک میں غیر قانونی طور پر سکونت اختیار کئے ہوئے تھے۔

Comments

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply