0

مچھروں کو خود سے دور رکھنا چاہتے ہیں؟ سب سے آسان طریقہ جان لیا

یہ دعویٰ ایک تحقیق میں سامنے آیا / فائل فوٹو
یہ دعویٰ ایک تحقیق میں سامنے آیا / فائل فوٹو

مچھروں سے قاتل جاندار کو سمجھا جاتا ہے کہ ان کی تشخیص ہوئی ہے ہر سال دنیا کے افراد کو نشان زد کیا گیا ہے۔

لیکن یہ بھی حقیقت ہے کہ روزمرہ کی زندگی میں ان سے بچنا آسان نہیں ہوتا۔

لیکن اب ثابت کرنے والوں نے اس کا آسان طریقہ بتا دیا۔

اگر آپ مچھروں کو خود سے دور رکھتے ہیں تو ناریل کی مہک مددگار ثابت ہو سکتی ہے۔

یہ دلچسپ دعویٰ امریکہ میں ہونے والی ایک تحقیق میں سامنے آیا۔

ورجینیا ٹکنالوجی کی تحقیق میں دیکھا گیا تھا کہ مختلف خوشبوؤں والے صابن کس شکار بنانے والے لوگوں کو مچھروں سے حد تک کردار ادا کرتے ہیں۔

تحقیق میں آپ کے ساتھ کیا گیا کہ اس کا سادہ سوال جواب کافی ہے، درستگی یہ ضروری ہے کہ صابن میں موجود کیمیکلز کسی فرد کے جسم کیمیکلز سے کس طرح ملتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اسی سے وضاحت ہوتی ہے کہ آخر ناریل کی مہک سے مچھروں کو دور رہنا ممکن ہے۔

تحقیق کے مطابق ایک فرد کی جسمانی مہک 350 سے زائد مختلف کیمیکلز کے امتزاج کا نتیجہ ہوتا ہے، جن میں کچھ کیمیکلز ہمارا جسم بنتا ہے جبکہ ہمارے اندر موجود دیگر بیکریا۔

ہر فرد کے جسم میں جیسے کیمیکلز آپ کی مقدار مختلف ہوتی ہے جس میں کچھ افراد مچھلیوں کا شکار ہوتے ہیں۔

بیماری، حمل یا موٹاپے سے کیمیکلز کا بدلتا ہے اور مچھروں کے لیے کشش بھی اس کے مطابق یا زیادہ ہوتی ہے۔

اس تحقیق میں 4 افراد کو شامل کرنے والے انہیں 4 مختلف صابن استعمال کرتے ہیں۔

ہر رضاکار کو اس نے دھونے کا کہا اور پھر ایک گھنٹے تک دونوں دماغوں پر کپڑا ڈالا، یہ عمل ہر صابن کے استعمال کے بعد۔

تمام صابنوں میں لیمون نامی مرکب موجود تھا جو ترش پھلوں میں ختم ہوجاتا ہے اور اسے مچھلیوں کو دور رکھنے میں مددگار تصور کیا جاتا ہے۔

لیکن صابنوں میں اس کی موجودگی سے لوگ مچھروں کے لیے زیادہ پرکشش بن جاتے ہیں۔

مجموعی طور پر محققین نے 4 کیمیکلز کو مچھروں کو آپنے والا قرار دیا جبکہ 3 انہیں دور رکھنے میں مؤثر قرار دیے ہیں۔

لیکن ناریل کی مہک کو مچھروں کو دور رکھنے کے لیے سب سے زیادہ مؤثر رابطہ کیا ہے۔

محققین کے مطابق ثابت ہوتا ہے کہ مچھر ناریل کی مہک کو پسند نہیں کرتے تو اس کے پھل والی مصنوعات جیسے تیل کے استعمال کے نتائج حاصل کرنے کے لیے بہترین ہے۔

اس تحقیق کے نتائج جرنیل سائنس میں شائع ہوئے اور محققین کا کہنا تھا کہ اسنل سے مزید تحقیق کی ضرورت ہے۔

ابھی یہ واضح نہیں ہے کہ ناریل کی مہک بذات خود مچھروں کو دور ہے یا یہ انسانی جِلد میں موجود کیمیکلز کوتی دور ہے جو مچھروں میں کردار ادا کرتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply