کورونا کی نئی لہر میں بچے زیادہ متاثر ہورہے ہیں، ماہر امراض کی وارننگ

16

امریکی ماہر امراض کا کہنا ہے کہ کورونا کی نئی لہر میں بچے زیادہ متاثر ہورہے ہیں، اس لیے جتنا ہوسکے انفیکشن سے بچا جائے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکہ کے وبائی امراض کے ماہر اور یو ایس یونیورسٹی آف میری لینڈ کے ڈاکٹر فہیم یونس کا کہنا ہے کہ کورونا کی نئی لہر میں بچے زیادہ متاثر ہورہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ایسا اس لیے نہیں ہوا کہ وائرس بچوں کے لیے زیادہ خطرناک ہے بلکہ ایسا اس لیے ہوا کیونکہ کورونا کا پھیلاؤ بہت زیادہ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ جب بھی آپ کسی طرح کے ویرینٹ سے متاثر ہوتے ہیں تو آپ کچھ امیونٹی پیدا کرلیتی ہیں جو مستقبل میں آپ کو اس وائرس سے لڑنے کا بہترین موقع دیتا ہے لہذا جتنا ہوسکے اس ویرینٹ سے بچیں۔

ڈاکٹر فہیم یونس کا کہنا تھا کہ ڈیلٹا ویرینٹ سے متاثر لوگ اب اومیکرون سے متاثر ہورہے ہیں اور جو لوگ اس نئے ویرینٹ اومیکرون سے متاثر ہورہے ہیں ان میں مستقبل میں کسی دیگر طرح کے ویرینٹ سے لڑنے کیا امیونٹی نہیں ہوگی۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ میں دونوں ڈوز اور بوسٹر ڈوز لگوانے کے باوجود لوگ اس ویرینٹ سے متاثر ہورہے ہیں جبکہ امریکہ میں کورونا ویکسین بھی سب سے زیادہ لگائی جارہی ہے لیکن پھر بھی ملک میں ہر دوسرا شخص اس سے متاثر ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.