0

آم پانی میں بھگو کر کیوں کھانے چاہیں؟ کیوں جان کر حیران رہ جائیں گے۔

آم کی گرمی سے آپ پارٹیز بھی نکلتے ہیں__فوٹو: فائل
آم کی گرمی سے آپ پارٹیز بھی نکلتے ہیں__فوٹو: فائل

موسمِ گرما سے متعلق واحد شی جو شاید سب کو اچھی لگتی ہے اس موسم میں پھل والا پھل یعنی آم، جو پھلوں کا بادشاہ ہے اور ذائقہ میں بھی اس کا کوئی ثانی۔

سارا سال انتظار کرنے کے بعد اس پھل کو کئی طرح سے کھایا جاتا ہے، کوئی اسے کاٹ کر کھاتا ہے، کوئی اس کے گھر میں کریم بناتا ہے تو کوئی لسی یا پھر ملک شیک۔

ماہرین کے مطابق صرف ذائعہ میں صحت کے لیے کافی اچھا نہیں ہے۔

لیکن آپ یہ جانتے ہیں کہ آم کو کچھ دیر پہلے اگر ٹھنڈے یا سادے پانی میں بھگو دیا جائے تو اس سے کیا ہوتا ہے؟

تو چلیں پھلوں کے بادشاہ آم کو پانی میں بھگو کر کھانے کی افادیت جانتے ہیں!

*آموں کو کھانے سے کم از کم 30 منٹ تک پانی میں بھگونا پانی

*آم میں بھگو نکالنے سے اس کی گرمی کم ہو جاتی ہے،آم کی گرمی سے پانی پر پمپ بھی لے سکتے ہیں۔

* آموں پر کئی قسم کی کیڑے مار امداد بھی استعمال کی جاتی ہے اور یہ کیمیکلز آپ کی صحت پر اثر ڈال سکتے ہیں جیسے سر درد، قبض اور دیگر مسائل۔

اس کے علاوہ جلد، اور ساتھ لینے کے مسائل بھی پیدا ہوتے ہیں۔

تاہم ہم کو پانی میں بھگو کر رکھنے سے کیمیکلز کا اثر ختم ہو گیا ہے، اس کے علاوہ ان کے اوپر جراثیم سے اس عمل کو ختم کر دیا گیا ہے۔

*آم میں قدرتی طور پر ختم ہونے والا ایک مادہ فائیٹک ایسڈ ہوتا ہے جو کہ ایک اینٹی نیوٹرینٹ سمجھا جاتا ہے، فائیٹک کی طرح کیلشیم، آئرن اور زنک کے جذبے کے عمل کو روکتا ہے، جس کے جسم میں معدنیات کی کمی ہوتی ہے۔ بن سکتا ہے۔

اس صورت میں آم کو چند دیر پانی میں بھگو کر فائٹک ایس کو بھی ختم کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply